خاتون جج کو دھمکیاں دینے کے کیس میں عمران خان کی عبوری ضمانت میں بیس ستمبر تک توسیع

خاتون جج کو دھمکیاں دینے کے کیس میں عمران خان کی عبوری ضمانت میں بیس ستمبر تک توسیع ۔ چیئرمین پی ٹی آئی کہتے ہیں ۔ چور نواز شریف، اور، دہشت گرد بانی ایم کیو ایم سے میرا موازنہ نہ کیا جائے ۔ شہباز گل کو تشدد کرنے والوں کے پاس ہی دوبارہ ریمانڈ پر بھیج دیا گیا ۔

اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی عدالت میں کپتان کی پیشی ۔ عدالتی حکم پر چیئرمین پی ٹی آئی ذاتی حیثیت میں عدالت آئے تو سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ۔ پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار ابھی تک شامل تفتیش نہیں ہوا ۔ عمران خان کے وکیل بابر اعوان کا کہنا تھا کہ تفتیشی افسر کے پاس عمران خان کا بیان موجود ہے ۔ سپیشل پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ جے آئی ٹی نے عمران خان کو طلبی کیلئے تین نوٹسز بھیجے مگر وہ پیش نہیں ہوئے ۔

بابر اعوان نے کہا کہ بیان لکھ کر تفتیشی افسر کو دے دیا گیا جسے ریکارڈ پر نہیں لیا گیا ۔ پولیس نے ضمنی میں کیوں نہیں لکھا کہ ملزم کا وکیل آیا اور بیان جمع کرایا ۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ ہم کوئی آرڈر پاس نہیں کریں گے ۔۔ فریقین کے وکلا پولیس کے سامنے شامل تفتیش ہونے کا طریقہ کار آپس میں طے کر لیں ۔ عدالت پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو میں عمران خان کا کہنا تھا ۔ نواز شریف اور بانی ایم کیو ایم سے موازنہ نہ کیا جائے ۔ سابق امریکی سفارت کار سے ملاقات کا جواب بھی گول کر گئے ۔

شہباز گل سے متعلق صحافی کے سوال پر چیئرمین پی ٹی آئی بولے ۔ جیل سپرنٹنڈنٹ نے شہباز گل پر تشدد کی تصدیق کی ۔ دوبارہ ریمانڈ پر انہیں لوگوں کے حوالے کر دیا گیا جنہوں نے تشدد کا نشانہ بنا قانونی کارروائی کا کہنے پر دہشت گردی کا مقدمہ بنانا مذاق ہے ۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد عمران خان کی عبوری ضمانت میں بیس ستمبر تک توسیع کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں