ملک بھر میں سیلاب سے تباہی،اموات کی تعداد982 ہوگئی

سیکڑوں بستیاں اور دیہات صفحہ ہستی سے غائب ۔۔ غم اور بے بسی نے متاثرین کو مسکرانہ ہی بھُلا دیا ۔۔ چاروں صوبوں، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر میں دریا بپھر گئے ۔۔ قدرتی آفت سے زمین بھی لرز اُٹھی ۔سیلابی پانی اور لینڈ سلائیڈنگ نے دیکھتے ہی دیکھتے سب کچھ ملیا میٹ کر دیا ۔۔ پلک جھپکتے ہی زندگیاں موت کی وادی میں چلی گئیں ۔ مجبور چہروں پر صرف ایک ہی امید ۔۔ کوئی آئے اور ہمیں زندگی لوٹا دے . ملک بھر میں بارشوں اور سیلاب نے تباہی مچادی۔ حادثات میں جاں بحق افراد کی تعداد 982 ہوگئی۔

ملک بھر میں سیلاب سے تباہی،اموات کی تعداد982 ہوگئی۔سیلاب سے گزشتہ 24گھنٹے کےدوران مختلف مقامات پر 113افرادزخمی ہوئے۔ مجموعی طور پر اب تک ایک ہزار 456افراد زخمی ہوگئے۔

خيبر پختونخوا میں بارشوں اور سيلاب سے گزشتہ 24گھنٹے کےدوران10افراد جاں بحق ہوئے۔سندھ میں 33افراد جان کی بازی ہار گئے۔بارشوں اور سيلاب سے پنجاب میں گزشتہ روز 2اموات ہوئیں۔

این ڈی ایم اے کا کہنا ہے ، بارشوں اور سيلاب سے 149 پلوں کو نقصان پہنچا۔ اب تک 6 لاکھ 82 ہزار سے زائد گھروں کو نقصان پہنچا ہے۔ 8 لاکھ 25 ہزار سے زائد مويشی بھی سیلابی ریلوں میں بہہ گئے۔

ملک بھر میں 48 ہزار 931 افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جاچکا۔متاثرین میں 27 ہزار سے زائد خیمے، 35 ہزار سے زائد ترپالیں اور 17 ہزار سے زائد کمبل تقسیم کئے گئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں